انتظار قتل کیس :عینی شاہد مدیحہ کیانی کے ساتھ بڑا ہا تھ ہو گیا ،نشے کی حالت میں وہ کر بیٹھی جو ہرگز نہیں ہونا چاہیے تھا

انتظار قتل کیس :عینی شاہد مدیحہ کیانی کے ساتھ بڑا ہا تھ ہو گیا ،نشے کی حالت میں وہ کر بیٹھی جو ہرگز نہیں ہونا چاہیے تھا کراچی(ویب ڈیسک ) ڈیفنس میں قتل ہونے والے نوجوان انتظار کے دوست کاظم نے جے آئی ٹی کو بیان دیتے ہوئے بتایا کہ مجھ سےغلطی ہوگئی۔ خود نشہ کیا اور

مدیحہ کیانی کو بھی کرایا، پھر ویڈیو بیان ریکارڈ کیا۔انتظار قتل کیس میں عینی شاہد مدیحہ کیانی کے ویڈیو بیان کے مرکزی کردار کاظم شاہ (انتظار کا دوست) نے جے آئی ٹی کو بیان قلمبند کروا دیا جس میں اس نے بتایا کہ خود نشہ کیا اور مدیحہ کیانی کو بھی نشہ کروایا جس کے بعد مدیحہ کا ویڈیو بیان ریکارڈ کروایا۔کاظم نے مزید بتایا کہ مدیحہ پر کوئی تشدد نہیں کیا۔ تفتیشی حکام نے کاظم کو پابند کیا ہے کہ جب اس کو تفتیش کیلئے بلایا جائے تو بغیر کسی تاخیر کے پہنچ جائے۔ (ن)

پشاور زلمی کے اونر جاوید آفریدی نے ڈیرن سیمی کو 10 ہزار ڈالرز دینے کا کیوں اعلان کیا؟ ایک ایسی خبر جس نے کھیلوں کی دنیا میں ہلچل مچا دی

پشاور زلمی کے مالک اونر جاوید آفریدی نے ڈیرن سیمی کو 10 ہزار ڈالرز دینے کا کیوں اعلان کیا؟ ایک ایسی خبر جس نے کھیلوں کی دنیا میں ہلچل مچا دی ۔۔۔۔شارجہ (مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) فرنچائز پشاور زلمی کے مالک جاوید آفریدی سماجی خدمات کے باعث دنیا بھر

میں جانے جاتے ہیں اور جب بھی کہیں بھی انسانیت کی خدمت کا موقع ملے، تو آگے بڑھ کر اپنی خدمات پیش کرتے ہیں۔پشاور زلمی کے کپتان ڈیرین سیمی کیلئے بھی انہوں نے ایسا ہی کچھ کیا ہے اور ان کی فاﺅنڈیشن کیلئے 10 ہزار ڈالرز دینے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ ایک اچھا کام کر رہے ہیں اور ہم ان کی مدد کیلئے کچھ بھی کریں گے۔سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری اپنے پیغام میں جاوید آفریدی نے لکھا ”میں ڈیرین سیمی فاﺅنڈیشن کیلئے 10 ہزار ڈالرز دینے کا اعلان کرتے ہوئے خوشی محسوس کر رہا ہوں۔ ہمارے کپتان ایک بہت ہی نیک مقصد کیلئے کام کر رہے ہیں اور ہم ان کی مدد کیلئے ہر کام کریں گے۔ ڈیرین سیمی آپ کو ایسے نیک کام کرنے کیلئے مزید ہمت ملے۔ “

سرحد پار سے بڑی خبر :بھارت کی بڑی سیاسی جماعت نے پاکستان کے حق میں ایسا مطالبہ کر دیا کہ مودی سرکار تلملا اٹھی

نئی دہلی(ویب ڈیسک) بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کی جانب سے پاکستان سے ’کوئی بات چیت نہیں‘ کی پالیسی پر بھارت کی بائیں بازوں کی جماعتوں کا صبر کا پیمانہ لبریز ہوگیا اور کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا-مارکس (سی پی آئی- ایم) نے اس عمل پر مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے اسلام آباد کے ساتھ جلد مذاکرات کی بحالی کا مطالبہ کیا۔

نجی اخبار کی رپورٹ کے مطابق سی پی آئی کی جانب سے عوامی جمہوریت کے معاملے پر دیئے گئے بیان میں کہا گیا کہ ’نریندر مودی کی حکومت پاکستان مخالف پالیسی کے باعث ایک بند گلی میں آکھڑی ہوئی ہے‘۔انہوں نے کہا کہ کشمیر پر تمام سخت رویوں اور قوم پرستانہ طریقوں کے باوجود نریندر مودی کی حکومت کو یہ اندازہ ہوگیا ہے کہ جموں اور کشمیر کے معاملے کے سیاسی حل کے لیے پاکستان کے ساتھ مذاکرات ایک اہم معاملہ ہیں۔سی پی آئی ایم کے سابق سربراہ پراکاش کارت کی جانب سے بھی حکومت پر زور دیا گیا کہ وہ 2003 کے جنگ بندی معاہدے کی بحالی کے لیے کام کرے اور پاکستان کے ساتھ جامع مذاکرت کو بھی بحال کرے۔سی پی آئی ایم کی جانب سے یہ بھی یاد دلایا گیا کہ اگست 2015 میں پاک-بھارت مذاکرات کو منسوخ کردیا گیا تھا اور بھارتی حکومت کی جانب سے واضح طور پر کہا گیا تھا کہ جب تک مبینہ سرحد پار دہشتگردی نہیں روکی جاتی مذاکرات نہیں ہوں گے، جس کے بعد ستمبر 2016 میں بھارت کی جانب سے مبینہ سرحد پار حملوں کے جواب میں لائن آف کنٹرول کے پار سرجیکل اسٹرائک کا دعویٰ بھی کیا گیا اور بھارتی وزیر دفاع منوہر پاریکر کی جانب سے دعویٰ کیا گیا

کہ گزشتہ چند سالوں میں جنگ بندی کی خلاف ورزی صرف یہی جواب بنتا تھا۔تاہم سرجیکل اسٹرائیک کے اس دعوے کے بعد جموں اینڈ کشمیر میں بین الاقوامی سرحد اور لائن آف کنٹرول پر اس پار سے شیلنگ اور فائرنگ میں اضافہ ہوا اور نومبر 2003 کے بعد سے سال 2017 میں سب سے زیادہ جنگ بندی کی خلاف ورزی ریکارڈ کی گئیں۔پارٹی کی جانب سے کہا گیا کہ اس شیلنگ اور آرٹلر فائرنگ کے نتیجے میں دونوں جانب عام شہریوں کی جانیں ضائع ہوئیں جبکہ بھارت کی جانب ہزاروں لوگوں کو اپنا گھر بار چھوڑنا پڑا اور اڑی سیکٹر میں 22 فروری سے 2 ہزار گاؤں کے لوگوں نے اڑی ٹاؤن میں پناہ لی ہے جبکہ وہاں اسکول بند ہوچکے ہیں اور معمولات زندگی بری طرح متاثر ہے۔کمیونسٹ پارٹی کی جانب سے کہا گیا کہ ’سرجیکل اسٹرائیک کے باجود سرحد پار عسکریت پسندوں کی جانب سے آرمی اور بی ایس ایف کے کیمپوں پر حملے جاری ہیں اور حال ہی میں جموں میں سنجوان فوجی کیمپ اور سری نگر میں سی آر پی ایف کیمپ پر حملہ کیا گیا’۔انہوں نے کہا کہ نریندر مودی کی حکومت کی جانب سے ’یک جہتی سوچ‘ کہ تمام مظاہرین اور علیحدگی کا مطالبہ کرنے والے پاکستان سے متاثر ہیں، انہیں جموں اینڈ کشمیر

میں سیاسی بات چیت کے لیے کوئی قدم اٹھانے سے روکتی ہیں اور یہ سوچ خالص سیکیورٹی اور عسکریت پسندی پر مبنی ہے، جس سے وادی کے حالات مزید خراب ہوں گے۔سی پی آئی کی جانب سے کہا گیا کہ حالات کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ جموں ایںڈ کشمیر کی وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کی جانب سے اسمبلی میں کہا گیا کہ ’اگر ہم اس خونی جنگ کو ختم کرنا چاہتے ہیں تو پاکستان کے ساتھ مذاکرات ضروری ہیں اور ہمیں بات چیت کرنی چاہیے کیونکہ جنگ کوئی حل نہیں‘، تاہم یہ بات حکمران جماعت بھارتی جنتا پارٹی اور نریندر مودی کی حکومت کی جانب سے فوری طور پر مسترد کردی گئی تھی۔کمیونسٹ پارٹی نے یاد دلایا کہ بھارتی جنتا پارٹی کے جنرل سیکیرٹی رام مادہو نے اس بات کا جواب دیا تھا کہ دہشت گردی اور بات چیت ایک ساتھ نہیں چل سکتے‘۔پارٹی نے کہا کہ ہمیں اس مخالفانہ موقف کو ختم کرنے کی فوری ضرورت ہے اور لائن آف کنٹرل اور جموں کشمیر کے بین الاقوامی سرحد پر جنگ بندی اور امن کے لیے بات چیت کی ضرورت ہے۔اس کے ساتھ ساتھ حکومت کو پاکستان کے ساتھ جامع مذاکرات کا آغاز کرنے کے لیے اقدامات کرنے کی ضرورت ہے کیونکہ کوئی بات چیت کی پالیسی کے بغیر دونوں ممالک کے مشیر قومی سلامتی کی جانب سے تیسرے مقام پر ملاقات کی گئی تھی۔(ذ،ع)

سیکیورٹی فورسز کی بروقت کارروائی ، کلبھوشن یادیو کے بعد ایک اور دہشت گرد سمیت 4 سہولت کار گرفتار،انکشافات سے بھرپور خبر آگئی

حیدر آباد(ویب ڈیسک)حیدر آباد سے گرفتار دہشت گرد ناگ راج کے تانے بانے بھارت سے جا ملے، نشاندہی پر چار سہولت گرفتار، دشمن ملک سے تربیت حاصل کی، غیر ملکیوں کو نشانہ بناتے تھے۔حیدر آباد پولیس نے انڈیا سے تربیت یافتہ دہشت گرد مظفر ناگ راج کو گرفتار کرتے ہوئے اس کی نشاندہی پر
مزید چار سہولت کاروں کو بھی حراست میں لے لیا گیا ہے۔ڈی آئی جی حیدر آباد جاوید عالم اوڈھو کا دہشتگردوں کی گرفتاری کے بارے میں میڈیا کو بتانا تھاکہ ملک دشمنوں کی گرفتاری پولیس کی بڑی کامیابی ہے۔ گرفتار دہشت گردوں کا تعلق کالعدم قوم پرست تنظیم جسمم کے گروپ سے ہے۔ گرفتار دہشتگرد رینجرز اور غیر ملکی باشندوں کو نشانہ بناتے تھے۔جاوید عالم اوڈھو کا کہنا تھا کہ دہشتگردوں کا سرغنہ مظفر ناگ راج ہے اور ان سب کو خفیہ ایجنسی کی مدد سے گرفتار کیا گیا۔ مظفر ناگ راج دشمن ملک بھارت سے تربیت یافتہ اور آئی ای ڈیز بنانے کا ماہر ہے۔ یہ دہشتگرد بدین کے راستے بھارت تربیت کے لئے جاتے تھے۔

پیسے کی گیم ۔۔۔پاکستا نی ٹی وی ڈراموں کی معروف اداکارہ جاناں ملک ان دنوں کہاں اور کس شغل میں گم ہیں ؟گرما گرم خبر آگئی

لاہور(ویب ڈیسک)پاکستانی اداکارائیں اپنی جاندار اداکاری کی بنا پر تو دنیا میں جا نی ہی جاتی ہیں مگر ان کی خوبصورتی کے چرچے بھی دیار غیر میں سنائی تک دیتے ہیں اداکارہ و ماڈل جاناں ملک چھٹیاں منانے کے لئے سری لنکا میں موجود ہیں جہاں وہ قدرتی نظاروں سے خوب لطف اندوز ہورہی ہیں جس کے

ساتھ وہ تاریخی اور سیاحتی مقامات کی سیر بھی کررہی ہیں۔ایک طرف تو جاناں ملک سیر وتفریح میں مصروف ہیں جبکہ دوسری طرف وہ اپنی تمام مصروفیات سوشل میڈیا پر شیئرکرنا بھی نہیں بھولتیں اور فوری طور پر تصاویر اپ لوڈ کرتی ہیں۔ جاناں ملک گزشتہ روز سری لنکا کے مشہور میوزیم کے علاوہ میریسا کے ساحلی علاقے میں واقع ایلیفنٹ پارک بھی گئیں جہاں انہوں نے ہاتھیوں کے ساتھ نہ صرف کافی وقت گزارہ بلکہ ایک ہاتھی کو دودھ بھی پلایا جو سری لنکا جانے والے سیاحوں کے لئے سب سے اہم سرگرمی سمجھی جاتی ہے۔یاد رہے کہ جاناں ملک ہر سال چند روز کے لئے چھٹیاں منانے بیرون ملک ضرور جاتی ہیں۔اس بارے میں ان کا کہنا ہے کہ کام تو سارا سال ہی جاری رہتا ہے لیکن اپنی ذات کے لئے وقت نکالنا بھی بہت ضروری ہے۔انہوں نے کہا کہ ویسے تو سارا سری لنکا ہی بہت خوبصورت ہے لیکن ساحلی علاقوں کی تو کیا بات ہے۔اس کے ساتھ ساتھ سری لنکا کے کھانے بھی بہت مزیدار ہیں۔واضح رہے کہ ڈرامہ انڈسٹری میں کامیابیوں کے آسمان کو چھونے والی اداکارہ آج کل سری لنکا میں موجود ہیں اور انہوں نے اپنے چاہنے والوں کے لیے تصاویر بھی شیئر کی ہیں

احتساب عدالت سے واپسی پر جب نواز شریف اور مریم نواز ایک بیکری پر گئے تو وہاں لوگوں نے اکٹھے ہو کر کیا کرنا شروع کر دیا؟ دیڈیو نے انٹرنیٹ پر دھوم مچا دی

احتساب عدالت سے واپسی پر جب نواز شریف اور مریم نواز ایک بیکری پر گئے تو وہاں لوگوں نے اکٹھے ہو کر کیا کرنا شروع کر دیا؟ دیڈیو نے انٹرنیٹ پر دھوم مچا دی ۔۔۔۔۔اسلام آباد ( مانیٹرنگ ڈیسک) سابق وزیر اعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز نے

اسلام آباد میں بلیو ایریا میں واقع بیکری سے چیزیں خریدیں اور اس دوران لوگوں میں گھل مل گئے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق سابق وزیر اعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز نے بلیو ایریا میں واقع ایک بیکری سے جوس اور بسکٹ خریدے۔نواز شریف اور مریم نواز اس دوران لوگوں میں گھل مل گئے۔اور ان سے بات چیت بھی کی۔لوگ نواز شریف کو اپنے درمیان دیکھ کر خوش ہو گئے۔عوامی لیڈر کے اس عوامی انداز کو لوگوں کی جانب سے بھی بہت پسند کیا گیا ۔اس دوران ایک شہری نے نواز شریف سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ آپ کو سی پیک کی سزا دی جا رہی ہے۔کیونکہ سی پیک امریکہ کی آنکھ میں کھٹک رہا ہے۔جب کہ بیکری میں آئے ایک اور گاہگ کا کہنا تھا کہ اس سے پہلے بھی نواز شریف کو موٹر وے بنانے کی سزا دی گئی ہے۔ ویڈیو دیکھیں ۔۔۔۔۔۔

ایک رلا دینے والی خبر : خاک وخون میں ڈوبے شام سے تن تنہا اردن کی طرف ہجرت کرنے والے اس بچے کے ہاتھ میں موجود لفافے سے ایسی چیز برآمد ہو گئی کہ دیکھنے والوں کی آنکھیں نم ہو گئیں

لاہور (ویب ڈیسک) لیجیے شام سے ایک دل چیر دینے والی خبر ملاحظہ کیجیے ۔۔۔۔ یہ ایک چار سالہ بچہ ہے جو شام سے اکیلے ریگستان سے گزر کر ھجرت کرکے اردن کی طرف گامزن پایا گیا ۔ اس بچے کے پاس نہ کھانا تھا اور نہ پیسے بلکہ اس کے ہاتھ میں ایک لفافہ تھا

جس میں اس کی ماں اور بہن کے کپڑے تھے ۔۔ یہ بچہ یو این او کی ٹیم کو دوسرے لوگوں کے ساتھ قافلے میں سب سے پیچھے اکیلا ہی چلتا ھوا نظر آیا ۔ ٹیم کے کارکن یہ دیکھ کر حیران رہ گئے کہ اتنے بڑے صحرا میں صفر کرنے والے اس بچے کے پاس نہ پانی تھا نہ کھانا اور نہ ہی زاد راہ کے طور پر نقدی بلکہ شاید خود سے بچھڑ جانیوالی مان اور بہن کی نشانیاں انکے کپڑے ہی تھے اور انہیں انتہائی ضروری سامان سمجھ کر یہ بچہ اکیلا اس صحرا میں سفر کرتا رہا ۔ملا دنیا بھر میں جہاں کہیں شامی مہاجرین آباد ہیں ،انہیں کسی حدتک پھر بھی ضروریات زندگی پہنچ رہی ہیں۔جب کہ شام میں پھنسے اب بھی لاکھوں لوگ ایسے ہیں جنہیں نہ صرف غذائی قلت کا سامنا ہے،بلکہ سردی اور بارش سے بچاؤ کے لیے مناسب سہولیات بھی درکار ہیں۔یونسیف کی رپورٹ کے مطابق گزشتہ چھ سالہ شامی خانہ جنگی کےدوران ایک لاکھ اکیاون ہزار سے زیادہ شامی بچے پیدا ہوئے۔تقریبا8.4ملین شامی بچوں میں سے ہرشامی بچہ خانہ جنگی سےمتاثر ہورہاہے۔ان میں زیادہ مشکلات ان مہاجرین بچوں کو ہے جو کیمپوں میں پیدا ہوئے۔مناسب دیکھ بھال نہ ہونے سےیہ بچےکئی بیماریوں کا شکار ہوچکے ہیں۔ان بچوں کی مدد کے لیے یونیسف ادارہ اپنے طور پرکام کررہاہے۔

اسی طرح اقوام متحدہ کاادارہ یو این ایچ سی آر بھی شامی مہاجرین کے لیے متحرک نظرآتاہے۔لیکن اقوام متحدہ جب شامی خانہ جنگی کےحل کے لیے پچھلے چھ سالوں سے کچھ نہیں کرسکا تو لاکھوں مہاجرین کے لیے بھلا کتنی سنجیدہ کوشش کرسکتاہے؟۔اس لیے اصل کام مسلمانوں کا ہےکہ وہ اپنے مظلوم بھائیوں کی مدد کے لیے آگے بڑھیں۔ترکی،قطر اور سعودی عرب نے شامی مہاجرین کی مدد کے لیے جوکوششیں کیں وہ قابل ستائش ہیں۔لیکن چند ممالک کی تنہاجدوجہد سے کچھ نہیں ہوسکتا۔ساٹھ لاکھ سے زیادہ مہاجرین کی مد د کے لیے پورے عالم اسلام کو متحرک ہونا ہوگا۔ بالخصوص پاکستان کو اپنے شامی مظلوم بھائیوں کی مدد کے لیے کچھ کرنا ہوگا۔کیوں کہ یہی وہ واحد ملک ہے جواسلام اور مسلمانوں پر آئے مشکل وقت میں اپنا اہم کرداراداکرتاہے۔اس لیےحکومت پاکستان اور ہرپاکستانی اور ہرمسلمان کا یہ فرض بنتا ہے کہ وہ اپنےشامی مسلمان بھائیوں کی مدد کے لیے حسب وسعت مالی مدد کرے،ورنہ کم ازکم دعاؤں میں ضرور اپنے مظلوم بھائیوں کو یادرکھے۔تاکہ رحمت اللعالمین صلی اللہ علیہ وسلم کے فرمان”انصرأخاك ظالما اومظلوما”(اپنےمظلوم بھائی اور ظالم کی مددکرو،ظالم کو ظلم سے روک کر اور مظلوم کو ظلم سے بچا کر)پر عمل ہوجائے اورشامی مظلوموں کے دکھوں کا مداواکرکے دین اسلام سے دور کرنے والے عناصر سے انہیں بچایاجاسکے۔(ش س م)

اہم ترین خبر : ایران اور پاکستان کے درمیان سفارتی تعلقات کشیدہ : وجہ تنازعہ کیا ہے ؟ جان کر آپ بھی ایران کے موقف کی تائید کریں گے

اسلام آباد (ویب ڈیسک) ایرانی حکام نے الزام لگایا ہے کہ پاکستان گیس پائپ لائن منصوبے پر معاہدے کی خلاف ورزی کر رہا ہے اور اسلام آباد سے تہران کے اختلافات شدید ہوگئے ہیں۔ سفارتی ذرائع کے مطابق ایک ارب ڈالر سے زائد ہرجانے کیلئے پاکستان ایران کو ثالثی عدالت میں جانے سے روکنے کی کوشش کررہا ہے۔

گیس پائپ لائن منصوبے پر عملدرآمد میں تاخیر کی منطق پر ایران پاکستان سے تنگ ہے۔ پاکستانی سینئر عہدیدار نے کہا کہ پاکستان گیس لائن منصوبے کیلئے پرعزم ہے۔ ہم ایران کو قائل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں کہ کسی بھی تاخیر میں ہماری بدنیتی شامل نہیں۔ امید ہے بات چیت کے ذریعے ایشو حل کرلیا جائے گا۔ صرف غلط فہمیاں ہیں‘ دور کرلی جائیں گی۔ گیس لائن منصوبہ زندہ ہے اور اسے منجمد نہیں کیا گیا۔ ایک اور عہدیدار نے بتایا ایران نے پاکستان سے کہا ہے کہ مذکورہ گیس لائن منصوبے پر امریکہ کی پیروی نہ کی جائے۔ ایرانی حکام کو یقین ہے منصوبے پر عملدرآمد کیلئے امریکہ پاکستان کو روک رہا ہے لیکن ہم یہ تاثر زائل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق امریکی حکام کو امید ہے افغان جنگ مذاکرات سے ختم ہو جائے گی اب بھی بہت کچھ غلط ہو سکتا ہے۔ ہم افغان فوج کی حمایت جاری رکھیں گے اور شدت پسندوں کو اس وقت تک نشانہ بنایا جائے گا۔ جب تک وہ مذاکرات نہیں کرتے امریکی محکمہ خارجہ کی ترجمان ہیتھر نے کہا امریکہ اس بات پر خوش ہے کہ اشرف غنی نے طالبان کو مذاکرات کی پیشکش میں کوئی پیشگی شرائط نہیں رکھیں۔ امید ہے القاعدہ کی طرح طالبان میں اختلافات پیدا ہوں گے ہم اس بات پر بھی خوش ہیں کابل کانفرنس کے دوران اشرف غنی نے پاکستان پر کوئی تنقید نہیں کی۔(ش س م)

ذرائع آمدن میں ایک دم اضافے کیلئے وظیفہ

یہ لفظ ہبہ سے بنا ہے جس کا مطلب بغیر معاوضہ کے عطا کرنا ہے یعنی ایسی عطا جس میں کوئی غرض نہ ہو جسے جو چاہا عطا فرمادیا۔ بغیر عوض کے دوسروں پر مال و دولت نچھاور کردیا۔ اس طرح بے سوال عطا فرمانے والے کو وہاب کہا جاتا ہے۔

اللہ تعالیٰ وہاب ہے‘ وہ اپنی مخلوق کو اس انداز میں دیتا ہے کہ اس کا کوئی ثانی نہیں کیونکہ دنیامیں اللہ تعالیٰ کے علاوہ اور کوئی ذات ایسی نہیں جو بغیرمانگے اور بغیر کسی غرض کے عطا کرتی جائے‘ اس لیے جو شخص اللہ تعالیٰ کو اس صفت سے پکارتا ہے۔ اللہ تعالیٰ اس پر اپنی عطا کے خزانے کھول دیتا ہے۔

جو چیز وہ مانگے مل جاتی ہے خاص کر اس اسم کا تعلق رزق کی فراخی کے ساتھ بہت ہے۔ یہ اسم جمالی ہے اور اس کے اعداد ۴ ہیں وہ شخص جو غربت اور تنگی رزق سے دوچار ہو یعنی خرچ زیادہ ہو اور آمدن بہت کم ہو اسے چاہیے کہ اس اسم کو روزانہ گیارہ سو مرتبہ صبح اور گیارہ سو مرتبہ شام کو ایک سو گیارہ دن تک پڑھے۔ اس کے علاوہ اس کے گھر والے بھی یہی اسم اسی طرح پڑھیں تو بہت جلد ان کی حالت بدل جائے گی۔

ذرائع آمدن میں ایک دم اضافے کے آثار پیدا ہوجائیں گے اور تھوڑے ہی عرصے میں اللہ تعالیٰ انہیں غنی کردے گا جب مقصد حل ہوجائے تو اس اسم کو ہمیشہ کیلئے بعد نماز فجر ایک ہزار مرتبہ پڑھتا رہے۔مال و دولت میں اضافے کیلئے یَاوَھَّابُ یَارَزَّاقُ کا وظیفہ بہت مؤثر ہے‘ اس لیے اضافہ کے خواہش مند شخص کو چاہیے کہ شام کی نماز کے بعد نوافل اوابین پڑھ‘اس کے بعد دو رکعت نفل اللہ تعالیٰ کی خوشنودی کیلئے پڑھے۔

ان نوافل کی ہر رکعت میں الحمدشریف اور سورت پڑھنے کے بعد ایک سو مرتبہ درج بالا وظیفہ پڑھے۔ نوافل کے بعد سر سجدے میں رکھ کر ایک سو گیارہ مرتبہ پھر یہی وظیفہ پڑھے۔ اس کے بعد سجدے ہی میں اضافہ رزق کی دعا کرے۔ انشاء اللہ بے پناہ مال و دولت میں اضافہ ہوگا اور یہ عمل ایک سال تک جاری رکھے۔

شام اور ٹیم سرِعام۔۔۔

شام کی شامِ غریباں دیکھ کر دل خون کے آنسو روتا ہے ۔ ہر دل اداس ہے ۔ ہر آنکھ اشکبار ہے ۔ سرِعام کی ٹیم نے ہمیشہ کی طرح اس بار بھی بیانات کے بجائے عملی مدد کرنے کا دعویٰ کیا ہے ،

معروف اینکر پرسن اقرارالحسن نے ایک ویڈیو پیغام جاری کرتے ہرہوئے کہا کہ اگر 10مارچ سے پہلے تک ان کے تمام سفری دستاویزات مل گئے تو وہ ملک ِ شام روانہ ہوجائیں گے اور اگرکسی وجہ سےشام نہ جا سکے تو 11سے 15مارچ تک شام کی سرحد سے شامی پناہ گزینوںپر بیتنے والے مظالم اور ان کے لئے ٹیم سرِعام کی امدادی سرگرمیوں سے آگاہ کریں گے ۔ جن سرگرمیوں کا آغاز ابھی سے کیا جا چکا ہے ۔
اقرارالحسن کا ویڈیو پیغام یہ ہے ۔