اپنے جنازے میں خود شرکت کرنے والی دنیا کی پہلی خاتون، یہ کیسے ممکن ہے؟ ایسی خبر آپ نے زندگی میں پہلے کبھی نہ پڑھی ہوگی

لوگ دوسروں کے جنازے میں تو شرکت کرتے ہیں لیکن ایک برطانوی بڑھیا نے اپنے ہی جنازے میں شرکت کا اہتمام کر لیا ہے۔ اخبار ’دی مرر‘ کے مطابق 93 سالہ خاتون ایتھل لیتھر کا کہنا ہے کہ وہ تقریبات میں شرکت کی بہت شوقین ہیں اور ان کی خواہش تھی کہ اپنی آخری رسوم میں بھی شرکت کریں۔ اپنی اس عجیب و غریب خواہش، اور اسے پورا کرنے کے لئے کیا طریقہ اپنایا،

اس کے بارے میں بات کرتے ہوئے ایتھل نے بتایا”میں یہ برداشت نہیں کرسکتی کہ اپنی آخری رسومات کی تقریب میں شرکت سے محروم رہوں۔،ا س لئے میں نے فیصلہ کیاکہ مرنے سے پہلے ہی اپنی آخری رسومات کی تقریب منعقد کرلوں۔ میں نے ایک مقامی کلب میں اس تقریب کے لئے بکنگ کروالی ہے اور دوستوں عزیزوں سے کہہ دیا ہے کہ میری آخری رسومات میرے مرنے سے پہلے ہی ہوں گی۔

میں اپنی بیٹی پالین، جس کی عمر 73 سال ہے، کے ساتھ چھٹیوں پر گئی ہوئی تھی جب میرے ذہن میں یہ آئیڈیا آیا اور میں نے اس پر عمل کرنے کا فیصلہ کر لیا۔اس موقع پر میں آخری رسومات کی تقریبات میں گایا جانے والا مشہور گیت ’میں یہ دنیا چھوڑ کر جارہی ہوں‘ بھی گاﺅں گی۔ میری آخری رسومات کی یہ تقریب تقریباً دو ہفتے بعد منعقد ہوگی۔ یہ ایک شاندا رپارٹی ہوگی جس میں خاندان کے 30سے زائد افراد اور کچھ دیگر دوست احباب شامل ہوں گے۔“

جن خواتین کے شوہر خوبصورت ہوتے ہیں، وہ زیادہ بے وفا ہوتی ہیں کیونکہ۔۔۔‘ سائنسدانوں نے خوبصورت مردوں کو انتہائی افسوسناک خبر دے دی

یہ بات قرین قیاس لگتی ہے کہ اچھی شکل و صورت والے مردوں کی بیویاں کسی اور کی جانب دیکھنے میں دلچسپی نہیں رکھتی ہوں گی، لیکن افسوس کہ حقیقت کچھ اور ہے۔ یہ افسوسناک انکشاف امریکا کی فلوریڈا سٹیٹ یونیورسٹی کے سائنسدانوں نے کیا ہے کہ مرد جتنے زیادہ خوبصورت ہوتے ہیں ان کی بیویوں میں بے وفائی کا رجحان اتنا ہی زیادہ ہوتا ہے۔

میل آئن لائن کے مطابق 233 شادی شدہ جوڑوں کے طویل مشاہدے سے تحقیق کاروں نے معلوم کیا ہے کہ اچھی شکل و صورت والے مردوں میں غیر خواتین کی جانب مائل ہونے کا رجحان زیادہ ہوتا ہے، اور غالباً یہی وجہ ہے کہ ان کی بیویاں بھی کچھ ایسے ہی رویے کا مظاہرہ کرتی ہیں۔ اس کے برعکس قدرے کم خوبصورت مرد اپنی توجہ بیگم کی جانب ہی مرکوز رکھتے ہیں جس کا ازدواجی زندگی پر مثبت اثر مرتب ہوتا ہے۔

اس تحقیق میں یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ جو لوگ اپنی ازدواجی زندگی کے جنسی پہلو میں بہت زیادہ متحرک ہوتے ہیں وہ عموماً ایک سے زائد افراد کے ساتھ تعلق کی جانب بھی نسبتاً آسانی کے ساتھ مائل ہو جاتے ہیں۔ تحقیق میں سائنسدانوں نے یہ بھی معلوم کیا کہ خوبصورت بیویوں کے شوہروں میں بے وفائی کا رجحان قدرے کم ہوتا۔

تحقیق میں یہ دلچسپ بات بھی سامنے آئی کہ خوبرو خواتین نسبتاً کم خوبرو خواتین کی نسبت قدرے زیادہ وفا شعار ثابت ہوتی ہیں لیکن مردوں میں یہ معاملہ الٹ تھا یعنی جو زیادہ ہینڈسم تھے وہ بے وفائی کی جانب بھی زیادہ مائل تھے۔ اس تحقیق کے دوران سائنسدانوں نے 233 شادی شدہ جوڑوں کے بارے میں ساڑھے تین سال تک مشاہدات کئے اور معلومات جمع کیں۔ یہ تحقیق سائنسی جریدے ’پرسنالٹی اینڈ سوشل سائیکالوجی‘ میں شائع کی گئی ہے

آدمی کا نیا آئی فون کموڈ میں گرگیا، ہاتھ ڈال کر نکالنے کی کوشش کی تو نتیجہ کیا نکلا؟ جان کر آپ کبھی غلطی سے بھی ایسی کوشش نہ کریں گے

مانا کہ آئی فون بہت قیمتی چیز ہے لیکن اتنی قیمتی نہیں کہ اس کی خاطر آپ اپنا ہاتھ ٹوائلٹ کی گندگی میں گھسا دیں اور پھر اس غلطی کے نتیجے میں دنیا کے سامنے تماشہ بھی بن جائیں۔ یہ افسوسناک معاملہ ایک چینی نوجوان کے ساتھ پیش آیا ہے جو ٹوائلٹ میں گرنے والے آئی فون کو نکالنے کی کوشش میں خود بری طرح پھنس گیا۔

ڈیلی سٹار کے مطابق تان نامی نوجوان اپنے دوستوں کے ساتھ لیوزان شہر کے ایک ریستوران میں کھانا کھانے گیا تھا۔ اسی دوران وہ ٹوائلٹ گیا لیکن دوران رفع حاجت اسے کال آگئی اور جب وہ فون کو جیب سے نکال رہا تھا تو یہ ہاتھ سے پھسلا اور ٹوائلٹ کے سوراخ میں جا گرا۔ تان کو اپنا مہنگا فون جاتا نظر آیا تو اس نے فوری طور پر اس کے پیچھے ٹوائلٹ میں ہاتھ ڈال دیا۔ جب وہ انگلیوں سے فون کو محسوس نا کر سکا تو بازور کو تھوڑا سا اور آگے کیا اور یونہی کرتے کرتے تقریباً پورا بازو ٹوائلٹ میں گھسا دیا۔ تب اسے احساس ہوا کہ کچھ گڑ بڑ ہو گئی ہے لیکن اب بہت دیر ہو چکی تھی۔

تان کا بازو ٹوائلٹ کے سوراخ میں پھنس گیا تھا اور پوری کوشش کے باوجود وہ اسے باہر نہیں نکال پا رہا تھا۔ مارے شرم کے اس نے شور بھی نہیں کیا اور آدھے گھنٹے تک وہیں پھنسا رہا۔ خوش قسمتی سے آدھے گھنٹے بعد ایک خاکروب نے ٹوائلٹ کا دروازہ کھولنے کی کوشش کی تو یہ ماجرا سامنے آیا۔ تان کو آزادی دلوانے کے لئے ریسکیو اہلکاروں کو بلوانا پڑا جنہوں نے ٹوائلٹ کو توڑ کر اسے رہائی دلوائی۔ بدقسمتی سے اتنی خواری کے باوجود موبائل فون اسے نہیں مل سکا۔

”آج رات میری ڈیٹ اس کے ساتھ ہے۔۔“ غریدہ فاروقی نے ویلنٹائنز ڈے کے حوالے سے ٹویٹر پر ایسا پیغام جاری کر دیا کہ پاکستانی سوچ بھی نہ سکتے تھے

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن )آج 14 فروری ہے یعنی ’ویلنٹائن ڈے ‘لیکن پاکستان میں اسے منانے پر اجازت نہیں دی گئی لیکن پھر بھی پاکستانی اپنی محبت کا اظہار سوشل میڈیا کے ذریعے کر رہے ہیں اور اپنی مصروفیات کے بارے میں بھی بتا رہے ہیں اور اسی تناظر میں معروف صحافی غریدہ فاروقی نے بھی پیغام جاری کر دیا ہے ۔

تفصیلات کے مطابق غریدہ فاروقی کا شمار ملک کے بڑے صحافیوں میں ہوتاہے اور وہ سوشل میڈیا پر کافی ایکٹو بھی نظر آتی ہیں تاہم انہوں نے سوشل میڈیا پر ویلنٹائنز ڈے کے حوالے سے پیغام جاری کرتے ہوئے اپنے ہاتھ میں ’کھجور ‘پکڑ کر تصویر شیئر کی اور ساتھ لکھا کہ ’آج رات میری ڈیٹ یہ ہے ‘۔غریدہ فاروقی نے اپنے پیغام جے ساتھ ویلنٹائنز ڈے کے ہیش ٹیگ کے علاوہ ”با حیا ڈیٹ “اور ’اسلامی ڈیٹ ‘کا بھی ہیش ٹیگ استعمال کیا ۔غریدہ فاروقی کے اس پیغام پر بہت سے صارفین انہیں داد دے رہے ہیں ۔

آدمی خاتون کی محبت میں پاگل، بیمار ہوئی تو اپنا گردہ اسے عطیہ کردیا، پھر شادی کی پیشکش کی تو خاتون نے کیا کہہ کر انکار کردیا؟ جان کر تمام مردوں کی آنکھوں میں آنسو آجائیں گے

برطانیہ میں ایک شخص خاتون کی محبت میں گرفتار ہو گیا۔ خاتون نے بھی اس سے محبت کا اقرار کیا۔ کچھ عرصہ بعد وہ بیمار ہوئی اور اس کے گردے ناکارہ ہو گئے تو اس شخص نے اسے اپنا گردہ بھی دے دیا لیکن صحت یاب ہونے کے بعد اس سنگدل خاتون نے ایسا کام کر دیا کہ سن کر ہر مرد افسردہ ہو جائے گا۔

دی مرر کی رپورٹ کے مطابق 49سالہ سائمن لوئس نامی اس شخص کو میری ایمانوئیل نامی خاتون سے محبت ہوئی، جو گزشتہ دو سال سے چلتی آ رہی تھی۔ اس دوران میری کے گردے خراب ہو گئے اور سائمن نے اس کی محبت میں اندھا ہو کر اسے اپنا گردہ عطیہ کر دیا۔نیا گردہ لگنے سے جب میری بالکل صحت مند ہو گئی تو گزشتہ دنوں سائمن نے اسے شادی کی پیشکش کی لیکن میری نے ایک بار بھی سوچے بغیر صاف انکار کر دیا۔ اس صدمے کے بعد بھی سائمن کا کہنا ہے کہ ’’میں نے اسے دل دیا تھا، پھر گردہ بھی دینا پڑ گیا۔

اس نے میرے ساتھ جو کچھ بھی کیا اس کا مجھے دکھ تو ہے لیکن مجھے کبھی بھی اسے نئی زندگی دینے پر پچھتاوا نہیں ہوگا۔‘‘ دوسری طرف 41سالہ میری کا کہنا ہے کہ ’’سائمن میرا بہترین دوست ہے اور ہمیشہ رہے گا۔ ہم ایک دوسرے سے سچی محبت کرتے ہیں۔ میں جانتی ہوں کہ اس نے میرے لیے جو کچھ کیا اس سے اس کی اپنی جان بھی جا سکتی تھی، لیکن پھر بھی اس نے میری محبت میں وہ سب کیا۔ تاہم مجھے ڈر ہے کہ اگر ہم نے شادی کر لی تو اس سے ہماری دوستی تباہ ہو جائے گی جو میرے لیے بہت اہمیت رکھتی ہے۔‘‘

خاتون پولیس آفیسر کی ایسی ویڈیو منظر عام پر آگئی کہ ہنگامہ برپاہوگیا، مردوں کو اپنے جسم کی کیا چیز سونگھا رہی تھی، جان کر ہی انسان گھبراجائے

امریکہ میں ایک خاتون پولیس آفیسر کی ویڈیو منظرعام پر آئی ہے جس میں وہ مردوں کو اپنے جسم کا ایسا حصہ سونگھا رہی ہوتی ہے کہ دیکھ کر ہی انسان گھبرا جائے۔ ڈیلی سٹار کی رپورٹ کے مطابق کرسٹین ہائمن نامی یہ آفیسر درحقیقت ایسے مردوں کو خدمات فراہم کرتی تھی جو اپنے اوپر تشدد سے جنسی لذت حاصل کرنے کی رغبت رکھتے ہیں۔

اس کی منظرعام پر آنے والی ویڈیو میں ایسے ہی مردوں کو دکھایا گیا ہے جن پر وہ تشدد کر رہی ہوتی ہے اور انہیں اپنے پاﺅں سونگھنے پر مجبور کر رہی ہوتی ہے۔امریکی ریاست نیوجرسی کی رہائشی کرسٹین کی زندگی کا یہ خفیہ پہلو سامنے آنے پر اسے نوکری سے معطل کر دیا گیا ہے۔رپورٹ کے مطابق امریکہ و دیگر مغربی ممالک میں یہ کاروبار بہت عروج پر ہے جس میں خواتین مردوں پر تشدد کرتی ہیں

اور اس کے عوض وہ مرد انہیں بھاری رقوم دیتے ہیں۔اپنا یہ روپ سامنے آنے پر کرسٹین کا کہنا تھا کہ ”میں بہت عرصے سے یہ کام کر رہی ہوں، میں شروع سے ہی غالب مزاج کی لڑکی تھی چنانچہ میں نے اسی کی مناسبت سے جوانی کے اوائل میں ہی یہ پیشہ اپنا لیا لیکن غلطی سے میں اپنے ادارے کو اس کے متعلق بتانا بھول گئی۔“

نوجوان لڑکی کی موت، مردہ خانے میں اس کی لاش کے ساتھ کیا انتہائی شرمناک سلوک کیا جاتا رہا؟ جان کر شیطان کے بھی ہوش اُڑجائیں گے

روس میں ایک لڑکی پراسرار طور پر قتل ہو گئی لیکن جب اس کی لاش مردہ خانے منتقل کی گئی تو وہاں اس کے ساتھ ایسا شرمناک سلوک شروع کر دیا گیا کہ شیطان بھی شرما کر رہ جائے۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق اوکسانا ایپلیکائیوا نامی یہ لڑکی روس کی معروف ماڈل اور بیوٹی کوئین تھی جو روس کے سب سے بڑے رئیلٹی شو ’ڈوم 2‘ میں بھی شرکت کر چکی تھی۔

اسے 2008ءمیں قتل کر دیا گیا تھا۔ اس کی لاش موٹروے کے ایک کنارے پر پڑی ایک ٹرک ڈرائیور کو ملی تھی۔ پولیس آج تک اس کے قاتل کو گرفتار نہیں کر سکی۔ گزشتہ دنوں پولیس نے اوکسانا کی لاش قبر سے دوبارہ نکالی اور مزید تفصیل کے ساتھ اس کے فرانزک ٹیسٹ کروائے تاکہ قاتل کو پکڑا جا سکے۔رپورٹ کے مطابق اب اوکسانا کا قاتل پکڑا جائے گا یا نہیں، یہ بعد کی بات ہے لیکن ان فرانزک ٹیسٹوں میں اوکسانا کے ساتھ مردہ خانے میں ہونے والے ایسے غیرانسانی سلوک کا انکشاف ہو گیا کہ پورا روس ہل کر رہ گیا۔ ٹیسٹوں کے نتائج سے پتا چلا ہے کہ مردہ خانے کا ایک تکنیک کار اس کی لاش کی بے حرمتی کرتا رہا تھا۔

لاش کے ساتھ منہ کالا کرنے والے اس 37سالہ بدبخت شخص کا نام الیگزینڈر ہے، جسے اس کے کرتوت سامنے آنے پر نوکری سے نکال دیا گیا ہے۔ روسی میڈیا کے مطابق الیگزینڈر کو سزا نہیں ہو سکتی کیونکہ روس میں ایسا کوئی قانون نہیں ہے جس کے تحت لاش سے بے حرمتی کے مجرم کو سزا ہو سکے۔ خبر سامنے آنے پر الیگزینڈر کی بیوی اسے چھوڑ کر چلی گئی ہے اور اس نے اپنا فون نمبر بھی تبدیل کر لیا ہے تاکہ یہ درندہ اس سے رابطہ نہ کر سکے۔روسی پولیس کا کہنا ہے کہ ”چونکہ الیگزینڈر کا اوکسانا کے قتل سے کوئی تعلق ثابت نہیں ہوا لہٰذا اسے گرفتار نہیں کیا جا سکتا۔“واضح رہے کہ اوکساناکو چلتی گاڑی سے دھکا دیا گیا تھا جس کے باعث اس کی موت واقع ہوئی۔

پاکستان کا ایسا گاؤں جہاں سگریٹ نوشی نہیں کی جاتی، گاؤں کے تمام فیصلے امام مسجد کرتا ہے

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) پاکستان کا ایک ایسا گاؤں جہاں سات سال سے سگریٹ نوشی پر پابندی ہے، تفصیلات کے مطابق ضلع فیصل آباد میں واقع ماموں کانجن کا ایک نواحی گاؤں 493 گ ب میں گزشتہ سات سال سے چرس، افیون، ہیروئن تو دور کی بات ہے کسی دکان پر سگریٹ تک فروخت نہیں ہوتے، تمام گاؤں والے امام مسجد کی بات مانتے ہیں اور انہی کے کہنے پر یہاں سگریٹ نوشی پر پابندی ہے،گاؤں کے تمام بوڑھے لوگوں کو اپنے اپنے گھروں میں حقہ پینے کی اجازت دی گئی ہے، امام مسجد مولانا محمد امین کے کہنے پر

کسی کو شادی بیاہ یا دیگر خوشی کے مواقع پر ڈھول، گانے بجانے اور آتش بازی کی بھی اجازت نہیں ہے، گاؤں والے جب اپنے بچوں کی شادی کسی دوسرے شہر کرتے ہیں تو پہلے ان کو مذکورہ رسوم نہ کرنے کا بتا دیتے ہیں، گاؤں میں ٹی ایم اے کے خاکروب نہیں ہیں اور گاؤں کے نوجوانوں نے اپنی مدد آپ کے تحت ہلال ویلفیئر سوسائٹی کے نام سے تنظیم بنا رکھی ہے جو تمام سماجی و فلاحی کام بہت اچھے طریقے سے انجام دے رہی ہے، لڑائی جھگڑے کے تمام معاملات گاؤں کی مسجد میں بیٹھ کر حل کیے جاتے ہیں، یہ گاؤں صفائی کے حوالے سے فیصل آباد کا مثالی گاؤں اور صفائی پر انعام بھی حاصل کر چکا ہے، دس ہزارسے زائد کی آبادی کے گاؤں میں صرف ایک مرکزی مسجد ہے جہاں پر تمام لوگ نماز جمعہ اور عیدین کی نمازیں پڑھتے ہیں، باقی نمازیں گاؤں کی دوسری مساجد میں جو گاؤں والوں کے نزدیک ترین ہوتی ہیں وہاں پڑھتے ہیں لیکن ایک اور حیران کن بات یہ ہے کہ یہاں اذان صرف مرکزی مسجد میں دی جاتی ہے اور یہ اذان تمام مساجد کے لاؤڈ سپیکر سے سنائی دیتی ہے، اس گاؤں کے لوگ امام مسجد کی باتوں پر عمل کرتے ہیں، یہی وجہ ہے کہ یہاں پر سگریٹ نوشی پر پابندی ہے۔

’میرے والد نے میر لئے کروڑوں روپے چھوڑے، ان کی موت کے بعد اب میں شادی کرنا چاہتی ہوں بے شک مرد پہلے سے شادی شدہ بھی ہوں کیونکہ۔۔۔‘ کروڑ پتی سعودی خاتون نے ٹی وی پر آکر ایسی بات کہہ دی کہ اب مردوں کی لمبی لائن لگ جائے گی

شادی بیاہ کے معاملات میں مشرق کی روایات قابل رشک ہیں لیکن بدقسمتی سے بعض اوقات والدین ان روایات کی آڑ میں اپنے بچوں کی زندگی اجیرن کرنے کا سبب بھی بن جاتے ہیں۔ شاید یہی وجہ تھی کہ ایک سعودی خاتون کو جب بالآخر اپنے باپ کی وفات کے بعد شادی کا موقع ملا تو رشتہ ڈھونڈنے کے لئے ایک ٹی وی شو کا سہارا لینے سے بھی نہیں ہچکچائی۔

یہ خاتون ’الرسالہ‘ ٹی وی چینل پر پیش کئے جانے والے مقبول پروگرام ’زاویہ الزیر‘کے ذریعے اپنے لئے خاوند تلاش کرنے کی کوشش کررہی ہے۔ جب اس سے پوچھا گیا کہ ابتک اس کی شادی کیوں نہیں ہوئی اور وہ کس طرح کا شریک حیات چاہتی ہے تو اس خاتون نے بتایا ’’میرے والد جب تک زندہ تھے انہوں نے مجھے شادی کی اجازت نہیں دی کیونکہ انہیں ہمیشہ یہ خدشہ لاحق رہتا تھا کہ جو بھی شخص مجھ سے شادی کرے گا وہ ان کی دولت کی خاطر ایسا کرے گا۔ ان کی وفات کے بعد مجھے کروڑوں کی رقم وراثت میں ملی ہے

لیکن اب میری عمر بھی 40 سال ہو چکی ہے۔مجھے اس بات پر کوئی اعتراض نہیں ہو گا کہ میں جس شخص سے شادی کروں وہ پہلے سے شادی شدہ ہو، اگر وہ مجھے مساوی حقوق دینے پر تیا رہو۔ میں کسی نوجوان کنوارے لڑکے سے شادی کی خواہشمند نہیں ہوں کیونکہ میرا خیال ہے کہ یہ اس کے ساتھ انصاف نہیں ہوگا۔ میں اولاد کی خواہشمند ہوں لہٰذا مجھے کسی مخلص شخص کی ضرورت ہے ناکہ کسی ایسے شخص کی جسے صرف میری دولت سے غرض ہو۔‘‘

فرعون کی قبر کے قریب سائنسدانوں کو مصر میں ساڑھے چار ہزار سال پرانی قبر مل گئی

مصر ایک قدیم شہر ہےاور اس میں بہت سے آثار قدیمہ موجود ہیں اہرام مصر اور دیگر قدیم مصری تعمیرات نے ہی دنیا کو خیرہ کر رکھا ہے اور اب فرعون کی قبر کے قریب ماہرین آثار قدیمہ کو ایک اور ساڑھے 4ہزار سال قدیم قبر مل گئی ہے جس کی دیواروں پر ایسی چیز کندہ تھی کہ دیکھ کر ماہرین بھی انگشت بدنداں رہ گئے۔ برطانوی نشریاتی ادارے کی رپورٹ کے مطابق ماہرین کویہ قبر گیزا کے بڑے اہرام کے قریب ملی ہے جو ماہرین کے مطابق 4ہزار 400سال قدیم ہے اور یہ اس دور کی ایک خاتون مذہبی پیشوا کی قبر ہے جس کا نام ہیٹپٹ (Hetpet)تھا۔

رپورٹ کے مطابق یہ مقبرہ آج بھی بہترین حالت میں موجود ہے اور اس کی دیواروں پر ہیٹپٹ کی کئی تصاویر بنی ہوئی ہیں۔ اس کے علاوہ موسیقی کی علامتیں اور ڈانس کے مناظر بھی اس مقبرے کی دیواروں پر بنے ہوئے ہیں۔دیواروں پر بندروں کی تصاویر بھی ہیں جن میں انہیں پالتو جانور کے طور پر دکھایا گیا ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ ہیٹپٹ اس دور میں خواتین کو زچگی میں مدد دیا کرتی تھی۔ یہ خاتون افزائش نسل کی دیوی ہیتھر (Hathor)کی پجاری تھی۔مصری وزیر برائے آثار قدیمہ خالد العدنی کا کہنا تھا کہ ”ہم جانتے ہیں کہ ہیٹپٹ نامی یہ خاتون اس دور میں اعلیٰ حکومتی عہدے پر فائز تھی اور اس کے بادشاہ کے محل میں بہت مضبوط رابطے تھے۔“نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کیجئیے